مشکل دور سے گذر رہی لڑکیوں کو خود کفیل بنانے کے لیے طویل مدتی پروجکٹ بنائے جائیں :اقوام متحدہ

اقوام متحدہ:(رائٹر)اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ 1.1ارب لڑکیاں طاقت و توانائی اور تخلیق کی نشانی ہیں لیکن ان میں سے لاکھوں بچیاں کئی مسائل اور ناگفتہ بہ حالات کا سامنا کررہی ہیں جس پر فوری طور پر توجہ دیئے جانے کی ضرورت ہے۔
اقوام متحدہ پالولیشن فنڈ ( یو این ایف پی اے)کے ایگزیکٹیو ڈائرکٹر ڈاکٹر نتالیہ کانیم نےانٹر نیشنل گرلز ڈے کے موقع پر آج کہا کہ لاکھوں بچیوں کو کئی طرح کے ناگفتہ بہ حالات کا سامنا کرنا پڑرہاہے جن پر عالمی سطح پر توجہ دی جانی چاہئے۔اس سال گرلز ڈے کی تھیم ’امپاور گرلز:بفور ،ڈیورنگ اینڈ آفٹر کرائسس‘ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ بحران سے دوچار کئی لاکھ بچیوں اور ان کے گھر والوں کو زندگی کیلئے جدوجہد کرنی پڑرہی ہے اور ان کے پاس کوئی دوسرا متبادل بھی نہیں ہے۔
یہ لڑکیاں بچپن کی شادی ،جنسی اور جنس پر مبنی مشکلات،انسانی اسمگلنگ ،عصمت دری اور جنسی غلامی جیسے غیر انسانی حالات کا سامنا کررہی ہیں۔ اقوام متحدہ کے مطابق 2017میں 12کروڑ 86 لاکھ لوگوں کو فوری طورپر انسانی بنیاد پر امداد کی ضرورت ہے اور ان میں سے ایک تہائی لڑکیاں اور خواتین ہیں۔
یونیسکوکی ڈائرکٹر جنرل ایرینا بوکووا نے اس موقع پر کہا-”لڑکیوں کو خود کفیل اوران کی بہبود کے بغیر کوئی بھی معاشرہ ترقی نہیں کرسکتا ہے اور نہ ہی امن کامعاہدہ مستقل طور پر نافذ ہوسکتا ہے۔اب وقت آگیا ہے کہ لڑکیوںاور بچیوں سے متعلق سبھی مسائل پر توجہ دی جائے اور ان کو خود کفیل بنانے کیلئے طویل مدتی پروجیکٹ بنائے جائیں“۔

Title: girls should be empowered before during and after crises | In Category: دنیا  ( world )
Tags: , ,