پاکستان کے دہشت گردوںکا ایرانی علاقہ میں دہشت گردانہ حملہ ، دوہلاک دو زخمی

تہران:ایران کے پاسداران انقلاب کا دعویٰ ہے کہ پاکستان ن، جو ابھی تک ہندوستان اور افغانستان میں ہی دہشت گردانہ کارروائیاں کر رہا تھا اب ایران میں بھی دہشت گردانہ حملے کرنا شروع کر دیے ہیں۔ پاسداران انقلاب نے بتایا کہ سنیچر کی شام کو پاکستان سے سرحد پار کرکے ایرانی علاقہمیں گھسے دہشت گردوں نے دو ایرانی شہریوں کو ہلاک اور دو کو زخمی کردیا پاسداران انقلاب نے اپنی سرکاری ویب سائٹ پر بیان جاری کرکے کہا کہ ہفتہ کے روز ایران کے سرحدی علاقہ سیستان ۔بلوچستان کے ساراوان میں پاکستانی دہشت گردوں نے فائرنگ جس میں مزدوری کر کے اپنا پہٹ پالنے والے دو مقامی افراد ہلاک اور دو زخمی ہو گئے ۔
پاسداران انقلاب نے جوابی کارروائی کر کے ایک حملہ آور کو مار گرایا اور دو کو زخمی کردیا جبکہ دہشت گردوں کے دستے میں شامل دیگر حملہ آور بھاگ کرپاکستانی علاقہ میں واپس گھسنے میں کامیاب رہے۔ حملہ آوروں کی شناخت ابھی تک نہیں ہو پائی ہے۔ لیکن علاقہ میں جیش العادل نامی تنظیم کے حملوں کی قدیم تاریخ رہی ہے۔ یہ تنظیم القاعدہ سے وابستہ ہے اور یہ پاکستان کے شورش زدہ خطہ بلوچستان سے اپنی سرگرمیاں چلاتا ہے۔ پاسداران انقلاب نے یہ بھی بتایا کہ19جون کو اس نے سیستان بلوچستان صوبہ کے ایرانی بندرگاہی شہر چاہ بہار میں انصار الفرقان نام کے ایک اور جہادی گرو پ کے ایک لیڈر اور چار اراکین کو ہلاک کیا تھا۔بعدا زاں اس کا علم ہوا کہ ایران کے صدر حسن روحانی نے ان حالات کے پیش نظر پاکستان کے وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کو ایک مکتوب ارسال کر کے پاکستانی دہشت گردوں پر لگام کسنے اور ایرانی علاقہ میں گھس کر کوئی کارروائی نہ کرنے کے قادامات کرنے کی اپیل کی۔

Title: irans revolutionary guards two citizens killed in cross border attack from pakistan | In Category: دنیا  ( world )