اسرائیل کو یہودی ریاست تسلیم کرنا ہی فلسطینیوں کے ساتھ امن کا ضامن:اسرائیلی وزیر اعظم

تل ابیب:اسرائیلی وزیر اعظم بن یامین نتن یاہو کے ترجمان ڈیوڈ کائس نے کہا ہے کہ اسرائیلیوں اور فلسطینیوں میں امن کا قیام اسی صورت میں ممکن ہے کہ فلسطین یہودی ریاست کو بنیادی طور پر تسلیم کر لے۔ انہوں نے وزیر اعظم کے حوالے سے مزید کہا کہ حماس کے ساتھ صلح کا کوئی امکان نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ نتن یاہو کا کہنا تھا کہ حماس کے ساتھ سیاسی طریقے سے مسئلے کو حل کرنے کی تجویز فقط ایک خیالی بات ہے اور جس طرح داعش کے ساتھ صلح نہیں ہو سکتی اسی طرح حماس کے ساتھ بھی اس کا کوئی امکان نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے کئی بار کوشش کی کہ غزہ میں جنگ نہ ہو لیکن ہمیں بڑے سخت دشمن کا سامنا ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا ہے کہ حماس ہمیشہ سے ہی اس خطے میں بدامنی کا باعث بنا ہوا ہے۔ انہوں نے اس پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہم اپنے دو قیدی فوجیوں کو حماس سے رہا کروانے کے لیے کوششیں کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر سفارتی اور سیاسی کوششیں کامیاب نہ ہوئیں تو ہم دوسرے طریقے استعمال کریں گے۔

Title: netanyahu spokesman mideast peace requires acceptance of israel | In Category: onslide  ( onslide )