برطانوی باشندوں کی اکثریت نے برطانیہ کو یورپی یونین سے الگ کر دیا

لندن: یورپی یونین سے علیحدگی کے حوالے سے کیے جانے والے استصواب رائے میں برطانوی لوگوں کی اکثریت نے برطانیہ کو یورپی یونین سے علیحدہ ہوجانے کی موافقت میں ووٹ دے کر آخر کار برطانیہ کو یورپی یونین سے الگ کر لیا۔
جبکہ برطانوی وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون برطانیہ کے یورپی یونین سے وابستہ رہنے کے حق میں تھے اور ووٹ بھی انہوں نے اسی کی موافقت میں دیا تھا۔برطانوی باشندوں کے اس تاریخی اقدام سے جہاں ایک جانب برطانیہ کو ایک غیر یقینی راہ پر ڈال دیا وہیں یورپی یونین کی ان کوششوں پر بھی کاری ضرب لگی ہے جو اس نے دوسری جنگ عظیم کے بعد ایک بڑا اور مضبوط اتحاد قائم کرنے کے لیے کی تھیں ۔
برطانوی باشندوں کے اس فیصلہ سے 28ملکی یورپی یونین بلاک کا مستقبل داو¿ پر لگ گیا ہے۔ جیسے ہی اس کا انکشاف ہوا کہ یو کے والوں نے 48.3کےمقابلہ51.7فیصد ووٹوں سے برطانیہ کو یورپی یونین سے باہر ہوجانے کی موافقت کی ہے عالمی حصص بازار اوندھے منھ گر گیا۔پونڈ اسٹرلنگ کی قیمت میں بھی زبردست کمی واقع ہوگئی۔