لیبیا میں بم دھماکہ اور تصادموں میں 40سے زائد ہلاک

طرابلس:ابھی چھ ماہ قبل لیبیا کے شہر زلٹن میں ایک فوجی ٹریننگ کیمپ میں ہلاکت خیز دھماکہ کی ، جس میں70افراد ہلاک ہوئے تھے، گونج تھمی بھی نہیں تھی کہ گذشتہ48گھنٹے کے دوران کہ لیبیا کے دارالحکومت طرابلس کے مشرق میں واقع بوللی شہرایک زبردست دھماکہ اور ملیشیا اور مقامی لوگوں کے درمیان ہونے والے تصادموں سے گونج اٹھا جس میں40سے زائد افراد ہلاک ہو گئے ۔
بوللی میں میونسپل کونسل کے ترجمان الشریف احمدجاداللہ نے بتایا کہ اس میں 25دیگر افراد زخمی ہوگئے اور لوگوں کی لاشیں ابھی بھی نکالی جارہی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ یہ واقعہ گذشتہ روز اس وقت پیش آیا جب ایک مقامی دکاندار سے سامان لینے کے بعد ملیشیا کے ایک ممبر نے پیسے دینے سے انکارکر دیا۔اس پر دکاندار نے اس کے پیر میں گولی ماردی۔ دکاندار کی اس حرکت جوابی کارروائی کرتے ہوئے ملیشیا کے دیگر ممبران نے دکان میں لوٹ مار کی اور متعدد گھروں کو آگ لگا دی۔
ترجمان نے مزید بتایا کہ منگل کی صبح سکیورٹی دستے جب جائے وقوعہ پہنچے تو فریقین کے درمیان فائرنگ اور جھڑپیں پھر شروع ہوگئیں۔اسی دوران مقامی رہائشی ملیشیا کی غیر قانونی سرگرمیوں کےلئے استعمال ہونے والے ایک گھر میں گھس گئے۔ جہاں دھماکہ خیز مواد کا ذخیرہ تھا جس میں دھماکہ ہوگیا اور متعددافراد ہلاک ہوگئے۔